میں اپنے روپ گزشتہ تک رسائی چاہتا ہوں

میں اپنے روپ گزشتہ تک رسائی چاہتا ہوں
اس تھکے ہارے بندن سے رہائی چاہتا ہوں

کہتی ہے فصل بہاراک سبز شجر سے یہ
مری مدت ہوئی تمام اب جدائی چاہتا ہوں

 Mehar Ali, sahiwal

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com