مرے بارے میں سوچا جا رہا ہے

مرے بارے میں سوچا جا رہا ہے
مجھے یہ عمر بھر دھوکا رہا ہے
گھڑی کو دیکھ کے میں روپڑا ہوں
یہ کیسا وقت چلتا جا رہا ہے
کھڑا تھا تیری چھت پر جو ستارہ
ہماری رات کو کھاتا رہا ہے
تری تصویر رکھ کر سو گیا تھا
یہ تکیہ رات بھر چبھتا رہا ہے
اندھیری شب دیے کی زد میں شاید
وہ کوئی دل تھا جو جلتا رہا ہے
مرے دل کے کسی صفحے پہ لکھا
وہ کیسا خط تھا جو خفیہ رہا ہے
قلم چھینے کوئی جا کر حسن سے
مری آنکھوں میں پانی آ رہا ہے
محمد بلال حسن

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com