تعلیمی ادارے اور نئی نسل

خالد خان کالاباغ
صحافی و کالم نگار
کوئی بھی معاشرہ تعلیم کے بغیر ترقی اور خوشحالی کی منازل طے نہیں کرسکتا ہے۔ترقی یافتہ ممالک نے محض تعلیم کی بدولت ترقی کی ہے۔جو لوگ اپنے ملک اور علاقے کی ترقی کی خواہش رکھتے ہیں ،وہ تعلیم کے میدان میں ضرور اپنا حصہ شامل کرتے ہیں۔ضلع میانوالی کی تحصیل عیسیٰ خیل ایک خوبصورت علاقہ ہے لیکن علاقہ پسماندہ رہا ہے۔اس پسماندگی کی بنیادی وجہ بہترین تعلیمی اداروں کا فقدان ہے۔جنرل (ر)عنایت اللہ خان نیازی کو اپنے علاقے میں تعلیمی اداروں کی کمی شدت سے محسوس ہوئی تو انھوں نے تحصیل عیسیٰ خیل کیلئے کیڈٹ کالج منظور کروایا۔عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کی منظور ی کے بعد کافی نشیب وفراز رہے لیکن آخروہ آفتاب طلوع ہوا جن کی کرنوں کیلئے تحصیل عیسیٰ خیل اور مضافاتی علاقہ جات کے باسی منتظر تھے۔ اس کے بعد عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کی منجمنٹ کا مسئلہ درپیش ہوا، جس سے کیڈٹس اور والدین کو پریشانی اور مایوسی کا سامنا کرنا پڑا لیکن کہتے ہیں کہ ہر تاریک رات کے بعد صبح کا اجالا ضرور نمودار ہوتا ہے۔اللہ رب العزت نے ضلع میانوالی کے لوگوں کی دعا سن لی اورضلع میانوالی کے سپوت میجر (ر) عطاء اللہ خان نیازی کوعیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کی منجمنٹ کا کٹھن ٹاسک سونپا گیا۔میجر (ر) عطاء اللہ خان نیازی نے اپنے ضلع کیلئے اس چیلنج کو قبول کیا۔آپ نے عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کے پرنسپل کا قلمدان سنبھالتے ہی اپنی ٹیم کے ہمراہ سخت محنت شروع کردی۔عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کے کیڈٹس اور ان کے والدین سے مایوسی کے بادلوں کو ہٹا کر ان کے چہروں پر تبسم لانے میں کامران ہوئے۔میجر (ر) عطاء اللہ خان نیازی کی چند ماہ کی محنت اور لگن سے عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کا شمار بہترین تعلیمی اداروں میں ہونے لگا۔پاکستان بھر کے بچوں نے عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج میں ایڈمیشن کی خواہش کا اظہار کیا۔آئیے، عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کے پرنسپل میجر(ر) عطاء اللہ خان نیازی کی زیست اور ان کی تعلیم کیلئے خدمات پر طائرانہ نظر دوڑائیں۔میجر (ر) عطاء اللہ خان نیازی 8مئی1960 ء کوضلع میانوالی تحصیل عیسیٰ خیل کے علاقے ترگ شریف میں پیدا ہوئے۔آپ نے ابتدائی تعلیم یعنی تین جماعتیں ترگ شریف سے حاصل کیں۔ ان کے والد صاحب پاک آرمی میں تھے تو وہ ان کوکوئٹہ چھائونی لے گئے۔وہاں آرمی پبلک سکول کوئٹہ سے پانچ سے چھ سال تعلیم حاصل کی۔کلاس ایٹ میں ملٹری کالج جہلم سرائے عالمگیر میں داخلہ لیا اور ایف ایس سی تک وہاں تعلیم حاصل کی۔ 1978 ء میں پاکستان ملٹری اکیڈمی جوائن کی اور ابتدائی دوسالہ کورس پی ایم اے میں کیا۔1979ء میں پاس آئوٹ کے بعدفائیو پنجاب رجمنٹ جوائن کی۔فائیو پنجاب رجمنٹ جو کہ سب سے پرانی اور اچھی یونٹ ہے ۔اس یونٹ میں پاکستان آرمی میں 26 سال مختلف قسم کی کمانڈ، سٹاف اپوائنٹ پر فرائض سرانجام دیے۔دوران سروس تعلیمی سلسلے کو جاری رکھا اور انھوں نے نسٹ(NUST) سے ایم بی اے مارکیٹنگ میں کیا۔جب آرمی سے ریٹائرڈ ہوگئے تو انھوں نے مختلف گورنمنٹ اور سیمی گورنمنٹ آرگنائزیشنز میں کام کیا۔ اگست 2019ء میں اللہ تعالیٰ نے ان کواپنے ضلع میانوالی کی سرزمین پرموقع فراہم کیا تاکہ وہ عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج جو کہ صوبہ پنجاب کانیا ادارہ ہے اس کو اپنے پائوں پرکھڑا کرسکے۔ گذشتہ چھ ماہ سے اپنی تمام تر صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے کوشش کررہا ہے کہ یہ پاکستان کے بہترین اداروں میںشامل ہو۔ اگست2019 ء میں عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج جوائن کیا اور 2017ء میں عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج میں پہلی انٹری ہوئی تھی۔بدقستمی سے آغاز میں ادارے کی منجمنٹ صحیح نہ تھی اور اس کے مختلف منجمنٹ مسائل تھے ، جس طرح امید کی جاتی تھی ،اس طرح پروان نہ چڑھ سکا ۔جس کی وجہ سے کیڈٹس اور والدین ناامید ہوگئے تھے۔میجر (ر) عطاء اللہ خان نیازی کے آنے سے پہلے تین انٹریز ہوچکی تھیں۔315 کیڈٹس ہونے چاہیے تھے لیکن صرف 160کیڈٹس تھے۔ان پانچ مہینوں میں انھوں نے لوگوں میں اعتماد بحال کیا۔ پاکستان بھر سے لوگ آئے اور انھوں نے اچھا ریسپانس دیا۔اس وقت ان کے پاس 211 کیڈٹس ہیں لیکن اچھی بات یہ ہے کہ نئی انٹری کی پلاننگ جنوری2020ء میں کی گئی۔ان کی انٹری اپریل 2020ء میں ہوگی اورملک بھر سے تین سو سے زائد طلبہ نے اپلائی کیا ۔ان کا مکمل پراسس کیا گیا جس میں رائٹن ٹیسٹ (Written)، انٹلیجینس ٹیسٹ (Intelligence)، انٹرویو اور میڈیکل ہوا۔اس سارے پراسس میں 105بچوں کا انتخاب کیا گیاجن میں15بچے تحصیل عیسیٰ خیل کے کوٹے اور90بچے اوپن میرٹ سے ہیں۔اپریل 2020ء میں کیڈٹس کی تعداد326 ہوجائے گی۔اس کے بعد ان کا پلان ہے کہ میٹرک کلاس 105 ہونی چاہیے لیکن ان کے پاس65 کیڈٹس ہیں۔ 40 کے قریب باہر سے ڈائریکٹ انٹری فسٹ ائیر میں لیں گے جس کی اگلے ماہ سے تشہیر کریں گے۔امید ہے کہ مئی 2020ء میں کیڈٹس کی تعداد370 ہوجائے گی۔ تعلیم کے ساتھ کھیلوں کے فروغ کیلئے بھی کام کررہے ہیں۔عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کی ٹیم نے اوکاڑہ میں منعقدہ ٹورنمنٹ میں فٹ بال مقابلے میں فسٹ پوزیشن حاصل کی۔عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج میں ہم نصابی و غیر نصابی سرگرمیوں پر توجہ دے رہے ہیں تاکہ کیڈٹس نہ صرف اچھے آفیسرز، ڈاکٹرز اور انجینئرز وغیرہ بنیں بلکہ ساتھ ساتھ بہترین شہری بھی بن سکیں۔ عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج کے پرنسپل میجر (ر) عطاء اللہ خان نیازی اور ان کی ٹیم کی بھرپور کوشش ہے کہ عیسیٰ خیل کیڈٹ کالج پاکستان کا ایک بہترین اور نمایاں ادارہ بن سکے۔اس سلسلے میں عوام کی حمایت اور تعاون ناگزیر ہے۔آپ یقین جانئے کہ اگر ہم اپنے بچوں اور تعلیمی اداروں پر توجہ دیں تو ہماری نئی نسل اور پاکستان کا مستقبل روشن ہوگا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com