خطرناک کرونا وائرس نے چین میں تباہی مچا دی ؛ 80 افراد ہلاک

لاہور(ویب ڈیسک) چین میں کورونا وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 80 ہو گئی، تین ہزار افراد متاثر ہیں۔

تفصیلات کے مطابق : چین کے شہر ووہان سے پھیلنے والے خطرناک وائرس سے ہلاکتوں میں اضافہ جاری ہے، صرف صوبہ ہبئی میں 76 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جہاں پانچ لاکھ میڈیکل اسٹاف ڈیوٹی پر مصروف ہیں۔ چین نے وبا کو روکنے کے لیے عام تعطیل میں بھی توسیع کر دی، ادھر امریکا میں کورونا وائرس کے 5 مریضوں کی تصدیق ہو گئی ہے جن کا تعلق کیلی فورنیا، ایری زونا، الی نوائے اور واشنگٹن سے ہے، حکام کے مطابق 100 کے قریب مشتبہ مریضوں کی اسکریننگ کی جا رہی ہے۔

آپ اس وائرس سے کیسے محفوظ رہ سکتے ہیں ؟ اہم تفصیلات
چین میں پھیلنے والے خطرناک کورونا وائرس کے باعث اب تک 1ہزار سے زائد لوگ ہسپتال پہنچ چکے ہیں اور 41کی ہلاکت ہو چکی ہے۔ یہ وائرس چین سے نکل کر امریکہ، جاپان، تھائی لینڈ اور تائیوان سمیت 11ممالک تک پھیل چکا ہے۔ یہ وائرس چین کے شہر ووہان سے پھیلنا شروع ہوا اور متاثرین کی اکثریت کا تعلق بھی اسی شہر سے ہے چنانچہ امریکہ سمیت کئی ممالک نے اپنے شہریوں کو ووہان اور گردونواح کے دیگر شہروں میں نہ جانے کی ہدایت کر دی ہے جبکہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اور دیگر طبی تنظیموں کی طرف سے اس وائرس سے بچنے کی احتیاطی تدابیر بھی بتائی جا رہی ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس ماضی میں پھیلنے والی وباﺅں سارس (SARS)اور مرس (MERS)سے کہیں زیادہ تیزی سے پھیل رہا ہے اور یہ انہی جتنا خطرناک بھی ہے۔ یہ سانس کے ذریعے ایک سے دوسرے انسان میں منتقل ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ متاثرہ شخص کے سانس، کھانسی وغیرہ سے یہ وائرس فضاءمیں پہنچتا ہے اور پھر اس فضاءمیں سانس لینے والے دیگر لوگوں میں داخل ہو جاتا ہے۔یہ وائرس چونکہ بالکل نیا ہے لہٰذا اس کے متعلق زیادہ معلومات فی الوقت دستیاب نہیں اور سائنسدان اس پر تحقیقات کر رہے ہیں۔ ماہرین نے اس وائرس سے بچنے کی تدابیر بتاتے ہوئے کہا کہ ”اگر آپ ووہان یادیگر کسی ایسی جگہ پر ہیں جہاں یہ وائرس موجود ہے تو آپ کو چاہیے کہ وہاں ہیوی ڈیوٹی ماسک پہنچیں تاکہ سانس کے ذریعے یہ وائرس آپ کے جسم میں داخل نہ ہو۔ باہر نکلیں تو ہاتھوں پر ہمہ وقت دستانے پہنے رکھیں اور اپنے پاس ٹشو پیپر رکھیں۔ ہوٹل یا کسی بھی دوسری جگہ پر تولیے یا اس نوع کی دیگرچیزیں ہر گز استعمال نہ کریں۔بار بار اچھے صابن سے ہاتھ دھونا اس وائرس سے محفوظ رہنے کا بہترین طریقہ ہے۔“ طبی ماہر ڈاکٹر ایملر کا کہنا تھا کہ اس وائرس کے شکار لوگوں سے جتنا ممکن ہو سکے دور رہیں کیونکہ اسی صورت آپ اس وائرس سے حتمی طور پر محفوظ رہ پائیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com