وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے پولیس میں 5700 بھرتیوں کی منظوری دے دی، پولیس انوسٹی گیشن سینٹر کا افتتاح

لاہور4 نومبر: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے پولیس انوسٹی گیشن کمپلیکس سنٹرل ہیڈ کوارٹر کی نئی عمارت کا افتتاح کر دیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے خواتین کے تحفظ کیلئے مخصوص موبائل ایپ ویمن سیفٹی ایپلیکیشن،ڈی ایچ اے میں ڈرائیونگ لائسنس سینٹر اور گلشن راوی پولیس سٹیشن کی نئی عمارت کا بھی افتتاح کیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو نو تعمیر شدہ انوسٹی گیشن سینٹر پہنچنے پر گارڈ آف آنر پیش کیا گیا اور پولیس کے چاق و چوبند دستے نے وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو سلامی دی۔ وزیراعلیٰ نے لان میں پودا لگایا اور انوسٹی گیشن کمپلیکس کا معائنہ کیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارنے نوتعمیر شدہ پولیس انوسٹی گیشن کمپلیکس میں اعلیٰ سطح کے خصوصی اجلاس کی صدارت کی اور پولیس میں 5700 بھرتیوں کی منظوری دی۔ اجلاس میں گونگے بہرے افراد کو ڈرائیونگ لائسنس کے اجراء کیلئے قانون سازی کی تجویز پر اتفاق کیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے 101 تھانوں کو اراضی کی منتقلی کا عمل تیز کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ پولیس افسران اوپن ڈور پالیسی پر عملدرآمد یقینی بنائیں۔ پنجاب میں پولیس کا اچھا نظام لانا چاہتے ہیں۔ پولیس عوام کو بہترین سروس دے، تمام وسائل مہیا کریں گے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب میں ہر پولیس افسر کو میرٹ پر کام کرنے کی آزادی میسر ہے۔ٹریفک اور ہائی وے پولیس کے مسائل بھی حل کئے جائیں گے۔عثمان بزدار نے کہا کہ صوبہ بھر میں انوسٹی گیشن کے عمل کو مرکزی انوسٹی گیشن سینٹر سے مانیٹر کریں گے۔ پراسیکیوشن اور انوسٹی گیشن کے درمیان اشتراک کار کو بہتر بنایا جائے۔مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچانے کیلئے معیاری انوسٹی گیشن بہت ضروری ہے۔پہلی مرتبہ انوسٹی گیشن کیلئے ضرورت کے مطابق فنڈز فراہم کئے جا رہے ہیں تاکہ عوام کی مشکلات اور پولیس میں رشوت کا خاتمہ ہو۔انہوں نے کہا کہ ہم نے وسائل دیئے، پولیس اب کام کرکے دکھائے۔نئی گاڑیاں سکواڈ اور سکیورٹی کی بجائے پولیس سٹیشنز کو دی جائیں گی جبکہ 150 نئی گاڑیاں ضروریات کے مطابق تھانوں تک پہنچ چکی ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ راولپنڈی، میانوالی اور ڈیرہ غازی خان سمیت پنجاب کے دیگر اضلاع میں ماڈل پولیسنگ سسٹم لایا جائے گا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ انویسٹی گیشن کے معیار کواپ گریڈ کرکے پنجاب پولیس کی استعداد کار کو بڑھانا اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ تھانہ کلچرکی تبدیلی اور عوامی سہولت کیلئے محکمہ پولیس کو جدید وسائل وسہولیات کی فراہمی کا سلسلہ جاری رہے گا۔ شہریوں کے مسائل کے حل کیلئے پنجاب پولیس کی جانب سے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال قابل ستائش ہے۔ ویمن سیفٹی ایپ خواتین او ر بچیوں کو جرائم پیشہ عناصر کی سرگرمیوں سے محفوظ رکھنے میں نمایاں کردار ادا کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس افسران کو عوام میں احساس تحفظ کے فروغ اور انکے مسائل کے حل کیلئے جذبہ حب الوطنی سے کام کرناہو گا۔ صوبے میں قانون کی حکمرانی اور شہریوں کو جرائم سے محفوظ رکھنے کیلئے عوام دوست پولیسنگ کو فروغ دیا جائے۔ صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا کہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی ہدایت پر پولیس کو جس قدر وسائل اور مراعات دی جا رہی ہیں ماضی میں اس کی مثال نہیں ملتی۔ معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ عوام پی ٹی آئی سے تبدیلی کے خواہاں ہیں۔ عوام میں پولیس کے امیج کو بہتر بنایا جائے گا۔ انسپکٹر جنرل پولیس انعام غنی نے کہا کہ 2 سال کے قلیل عرصے میں پولیس کیلئے جو کیا گیا ماضی میں اس کی کوئی مثال نہیں۔ جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ بننے سے پولیس کی کارکردگی میں بہتری آ رہی ہے۔ پولیس افسروں کو ایگزیکٹو الاؤنس دینے پر وزیراعلیٰ کے شکر گزار ہیں۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو ایڈیشنل انسپکٹر جنرل پولیس انوسٹی گیشن فیاض احمد دیو نے انوسٹی گیشن کے نئے نظام کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی۔صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت، معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان، انسپکٹر جنرل پولیس انعام غنی اور اعلیٰ پولیس حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com