الحمراء 2021 کا خیر مقدم کرتا ہے

محبتوں کا سفر نہ تو کبھی رک سکتا ہے نہ کبھی تھم سکتاہے,اِس عزم کیساتھ
الحمراء 2021 کا خیر مقدم کرتا ہے
سال2020 ہر قومی تہوار کوکورونا کے باعث محتاط ر انداز میں منایا گیا


صبح صادق
اس برس الحمراء میں دو اہم واقعے ہوئے۔۔۔ایک کورونا آیا۔۔۔دوسرا ثمن رائے آئیں۔۔۔کرونا نے جہاں ساری سرگرمیاں معطل کر دی۔۔۔ ثمن رائے نے وہاں ان کو جاری رکھنے کے لئے نئی نئی راہیں نکالیں۔۔۔گزشتہ چھ ماہ سے ریکار ڈ پروگرامز کئے۔۔۔کوویڈ19کے ایس او پیز کو مکمل طور پر اپنایا گیا۔۔۔الحمراء کو۔۔۔نئے حالات۔۔۔نئے چیلنجز۔۔۔کا سامنا کرنا پڑا۔۔۔دُنیا کے قد م بقدم چلنے کے لئے اس ادارہ کو جدت کی سمجھ بوجھ رکھنے والی قیادت کی ضرورت تھی۔۔۔الحمد اللہ۔۔۔ثمن رائے کی صورت ایک تجربہ کار،محنتی،وژنری افسرملی۔۔۔ثمن رائے کو آرٹ اینڈ کلچر سے اچھی راہ و رسم ہے۔۔۔تمام پروگرامنگ کو نئے ڈھنگ دیئے۔۔۔تمام معطل ادبی وثقافتی سرگرمیوں کو بحال کر دیا گیا۔۔۔آن لائن سروس کا آغاز کیا۔۔۔محبتوں کا سفر نہ تو رک سکتا ہے نہ تھم سکتاہے۔۔۔تمام پروگرام آن لائن کر دیئے گئے۔۔۔الحمراء کی آؤٹ ریچ میں اضافہ ہوا۔۔۔ پہلاقدم الحمراء کی سالانہ ینگ آرٹس نمائش کا انعقاد تھا۔۔۔جس میں پاکستان بھر کے نوجوان آرٹسٹوں کا کام لگایا جانا تھا۔۔۔یہ نمائش عموما ہر برس اپریل میں منعقد ہوتی ہے۔۔۔جو کورونا کی وجہ سے رکی پڑی تھی۔۔۔ایگزیکٹوڈائریکٹر الحمراء ثمن رائے نے یکم جون 2020کو ادارہ کی بھاگ دوڑ سنبھالی۔۔۔ آتے ساتھ پہلا کام ہی اس نمائش کے انعقاد کروانے کا کیا۔۔۔جو بہت کامیاب گیا۔۔۔یہ آفیسر دلیر ی میں اپنی مثال آپ ہیں۔۔۔ورچوئل ٹور بنایا گیا۔۔۔افتتاح کر دیا گیا۔۔۔آئیڈیا اتنا ہٹ ہوا کہ سی ایم پنجاب سردار عثمان احمد خان بُزدار نے اس اقدام کی بہت تعریف کی۔۔۔الحمراء آرٹ میوزیم کا ورچوئل ٹور بنایا گیا۔۔۔الحمراء اکیڈمی آف پرفارمنگ آرٹس کی تمام کلاسز کو آن لائن کر دیا گیا۔۔۔200سے زائد لیکچر ریکارڈ کئے گئے۔۔۔ہر قومی تہوار کو شاندار انداز میں منانے کی روایت کا آغاز کردیا گیا۔۔۔14اگست کے موقع پر قومی ترانہ جاری کیا۔۔۔جس کی دنیا بھر میں دھوم ہوئی۔۔۔اس ترانہ کی پیش کش اتنی دلپذیر تھی کہ اسے بیجنگ میلے میں لوگوں کو دیکھانے کے لئے منتخب کر لیا گیا۔۔۔بات محبتوں کے پرچار کی ہو۔۔۔رُتوں کی آمد کی ہو۔۔۔ملکی یک جہتی یا عالمی سطح پر سوفٹ امیج کی بہتری کی ہو۔۔۔الحمراء ہر جگہ آپ کو اپنا کردار نبھاتا ملے گا۔۔۔ایک اہم کامیابی کا ذکر کرتا چلوں۔۔۔ان آن لائن سرگرمیوں کی ایک ڈاکومنٹری بنائی گئی جو یونیسکو رشیا نے میراتھون آف کلچر میں شامل کیا اور پوری دنیا کے سامنے پاکستانی ادب و ثقافت کا پرچار ہوا۔۔۔ہفتہ شانِ رحمت اللعالمین ﷺکو مذہبی عقیدت و احترام سے منایا گیا۔۔۔سندھ کلچر ڈے کی تقریبات میں الحمرا ء نے اپنا بھرپور حصہ ڈالا۔۔۔ حمد،نعت شریف اور قوالیاں ریلیز کی گئیں۔۔۔ان چھ ماہ میں منعقد کروائے گئے ہر پروگرام کو ڈاکومنٹری کے ذریعے محفوظ کیا گیا تاکہ ہر دور کے لئے کار آمد ثابت ہوسکے۔۔۔مختلف ادبی و ثقافتی اداروں کے ساتھ معاہدے کئے گئے۔۔۔انٹر ڈیپارنمنٹل ڈبیٹ سیشن سے الحمراء کی اندورنی فضاء کو خوبصورت بنایا گیا۔۔۔ فنون لطیفہ کی کلاسز پر خصوصی توجہ دی گئی۔۔۔ ادبی وثقافتی سلسلہ ”کچھ یادیں،کچھ باتیں“اور ’’روشن ستارے“میں سامعین کی ان شخصیات سے ملاقات کروائی گئی جو نوجوان نسل کے لئے عملی زندگی میں آگے بڑھنے کا حوصلہ فراہم کرتے ہیں۔۔۔الحمراء کے ان اقدامات سے معاشرے میں توازن پید ا کرنے میں مدد ملی۔۔۔آپسی بھائی چارے کی فضاء پروان چڑھی۔۔۔بین الاقومی سطح پر دنیا کو پاکستانی قوم کے پرامن ہونے کا پیغام ملاجو کہ ایک بہت بڑی کامیابی ہے۔۔۔ادارہ کی مجموعی کارکردگی بلاشبہ قابل تقلیدرہی۔۔۔تاریخ میں پہلی بار الحمراء آرٹس کونسل کی سالگرہ منائی گئی۔۔۔یہ کارکردگی یکارڈ ساز ہے
پاکستان ‘خصوصا پنجاب خوبصورت ثقافتی رنگوں کی دھرتی ہے۔۔۔یہاں کی بدلتی رُتیں انسانی محبتوں میں اضافہ کا باعث ہیں۔۔۔ تہوار رواداری کو فروغ دے رہے ہیں۔۔۔میٹھی زبانیں قربتیں بڑھا رہی ہیں، پورے پنجاب کے علاقائی رسم و رواج معاشرے کے ماتھے کا جومر ہیں۔۔۔لوگ کہانیاں نئی نسل کو سماجی زندگی گزارنے کا طریقہ بتاتی ہیں۔۔۔ الحمراء آرٹس کونسل کی ادب وثقافت پسند پالیسوں کی بدولت ہماری قدیم عظیم اقدارکی ترویج و ترقی سے پنجاب بھر کا آنگن بھائی چارہ،امن و سلامتی گہوارہ بن رہا ہے۔۔۔۔پنجاب کی اس ادبی و ثقافتی خوبصورتی کا اعتراف عالمی ادارے کر رہے ہیں،یونیسکو کی طرف سے لاہور شہر کو”سٹی آف لٹریچر“ کا رُتبہ ملنا پورے پاکستان کے لئے فخر کا مقام ہے،ہمارے اس ادبی ادارے نے جہاں زندگی کے تمام شعبوں کی بہتری کیلئے موثر اقدامات کئے ہیں وہاں زبان وادب، تہذیب و ثقافت کی آبیاری پر بھی خصوصی توجہ دی،اس دھرتی کے آرٹ اور آرٹسٹ کے فلاح وبہبود کے لئے پروگرام شروع کئے جس کے نتیجے میں یہاں فن پھلا پھولا ہے،ادبی و ثقافتی ترقی کے اس سفر میں ہم اپنے آرٹسٹوں کے شکرگزار ہیں جو پنجاب سمیت ملک بھر کے نیک نامی میں اپنا کلیدی کردار ادا کر رہے ہیں۔۔۔۔الحمراء جدید دور کے تمام چیلنج کا مقابلہ کرنے کی اہلیت رکھتاہے،قدرت نے ہمیں بے پناہ وسائل مہیا کئے ہیں،ادب اور ادیب بھی قدرت کا ایک خاص تحفہ ہیں،جو افراد کو معاشرہ کا مثالی شہری بنانے کے لئے اپنی خدمات سر انجام دے رہے ہیں،ہماری دھرتی کی خوشبو کی دُنیا میں کوئی دوسری مثال نہیں ملتی،ہمارے ادیب نے اسی خوشبو کو دُنیا کے کونے کونے میں پھیلایا ہے،جس سے دُنیا میں ہمارے بیانیے کو تقویت ملی ہے کہ ہم ایک عظیم قوم ہے،یہ بہادر سپوتوں کی سرزمین ہے، صوفیاء کرام کی مسکن ہے،ہم امن و سلامتی کے علمبردار ہیں۔۔۔الحمراء آرٹ،ڈرامہ، مصوری، موسیقی اور فنون لطیفہ کی تمام اصناف سے وابستہ ان تمام افراد کا شکر گزار ہے جو شب وروز محنت کر کے دنیا کے سامنے اپنا اصل چہرہ پیش کر رہے ہیں،یہ افراد ہمارا اثاثہ ہیں،انہیں اسی جذبے سے اپنا کام جاری رکھنا چاہیے،خلوص نیت اور ایمانیداری سے ملک وقوم کا نام روشن کرتے رہنا چاہی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com