پاکستان کی سالمیت میں فوج کا کردار

پاکستان کی سالمیت میں فوج کا کردار
ثناء احمد جرمنی
ترجمان پاک فوج کا کہنا ہے کہ کسی بھی بھارتی جارحیت پہ اُس کو بھر پور جواب دیا جاۓ گا آزاد کشمیر کے وزیر اعظم کا بیان بھی سامنے آ گیا ہے کہْ ْ ْ ہم پاک فوج کے ساتھ کھڑے ہیں بھارتی فوج کو لاشیں چھوڑ کے بھاگنے کا موقع بھی نہیں ملے گا” آر ایس ایس کے انتہاء پسندی کے نظریے نے بھارت میں انتشار برپا کر رکھا ہے آر ایس ایس کی نسلی بالا دستی ایسے لے ڈوبے گی۔۔۔انتہاء پسندی کا عمل کبھی مثبت نتائج نہیں دیتایہ ہمشہ تباہی پھیلاتا ہے اور جڑوں سے کسی بھی خطے کو ہلا دینے کے لیے کافی ہوتا ہے بھارت نے جو نسلی تعصب کا کھیل اپنے ملک میں شروع کر رکھا ہے وہ اُسے دبانے میں نا کام ہو چکا ہے ہر شہر ہر صوبہ اس سے متاثر ہے مسلمانوں پہ ظلم وستم کی نئی داستان رقم کر رہا ہے! مغربی بنگال کی وزیراغظم نے بھی بیان دے دیا ہےکہ “ پی جے پی نفرت کے ایجنڈے کا حصہ ہے” جواہر لال نہرو یونیورسٹی پہ حملہ کرنے والوں کی بھی شناخت ہو چکی ہے اس کے ساتھ ساتھ آزاد کشمیر میں مودی سرکار کے ظلم وستم کے ایک سو ستر دن ہو چکے ہیں اور حالات کشیدہ ہیں بھارت کی طرف سے ایل او سی پہ اکثر حملے ہوتے رہتے ہیں اور بدلے میں اُسے ہزیمت اٹھانی پڑتی ہے پاک فوج بھر پور جواب دے دیتی ہے بھارت اسی طرح کوٹلی آزاد کشمیر میں بھی گولا باری کرتا رہتاہے قدرتی امر ہے کے لوگوں میں خوف وہراس پھیل جاتا ہے اور سرحدی علاقوں سے اکثر بچوں اور بزرگوں کو محفوظ مقامات پہ پہنچا دیا جاتا ہے جس سے اُنہیں اس تبدیلی کے عمل سے تکلیف بھی اُٹھانی پڑتی ہے۔۔۔۔۔۔انڈیا کی لاف گزانیاں بھی ملاحظہ فرمائیں ” اے این آئی کے مطابق منوج مکھن نروانے نے کہا ہے آیئندہ کے لائحہ عمل میں ہماری نظر تعداد سے زیادہ کوالٹی پہ ہو گی “ایک اور بیان میں کہا گیا ہے “پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کو ہم پانچ اگست تک آزاد کروا لیں گے ان کی پارلمانی قرارداد میں کہا گیا ہے کہ پورا جموں اور کشمیر ہمارا حصہ ہے “ بھارتی چیف کا کہنا ہے “ اگر ہمیں پارلیمان سے ایسا کوئی حکم ملتا ہے تو ہم اس پہ ضرور کاروائ کریں گے “
جنرل آصف غفور کا کہنا ہے “ بھارت کا یہ بیان صرف ہرزہ سرائی پہ مبنی ہے کشمیر کے بارے میں بیان معمول کا حصہ ہے اور وہ اپنے لوگوں کو خوش کرنے کے لیے ایسے بیان دے رہے ہیں پاکستان بھارت کی کسی بھی ایسی کاروائی کا جواب دینے کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں “
پچھلے ستر سالوں سے دونوں ممالک ایک دوسرے کے حریف ہیں انڈیا نے کشمیر جہاں مسلمان کیثر تعداد میں تھے تقسیم ہندوستان کے وقت کشمیر میں فوجیں داخل کر کے غاصبانہ قبضہ کر لیا گیا تھا!کشمیری مجاہدین نے ایک تہاہی حصہ آزاد کروا لیا!کشمیر اورآزاد کشمیر کی لائن آف کنٹرول پر ہمشہ کشیدگی رہی ہے اور دونوں ممالک کے درمیان چار جنگیں بھی ہو چُکی ہیں اب دونوں ہی ایٹمی طاقت حاصل کر چکے ہیں مسلمان تو ویسے ہی شہادت کی خواہش لیے رہتا ہے اور وطن کی حفاظت میں اس کے دین اسلام کا بھی احساس ہے یہ ہی وجہ ہے کہ بھارت کُھل کے جنگ کرنے سے گُریز کر رہا ہے کچھ ہی عرصہ پہلے انڈیا نے جب پاکستان سے چھیڑ چھاڑ کرنے کی کوشش کی تو اُس کے فوجی چھٹی کے لیے پر تولنے لگےاور اگر خبروں کی مانیں تو کئ بیماری کی درخواست دے کے رفو چکر ہو گے۔۔۔!انڈیا کی ایک سازش جو ہمیں نظر آتی ہے وہ “پراکسی وار” ہے جس سے وہ پاکستان کو سرحدوں پہ وقتا فوقتا اُلجھاۓ رکھنا چاہتاہے تا کہ وہ اندرونی طور پہ کمزور ہو جائے اُس کے مزموم مقاصد میں یہ چیز شامل ہے کہ پاکستان کشمیر کو بھُول جائے یہی وجہ ہے کے وہ مالیخولیا میں مبتلا ہو چکا ہے اُسے سُپر پاور بننے کے دورے پڑتے رہتے ہیں اسی لیے اُس نے سرجیکل سٹرائک کا حوا بھی کھڑے کیے رکھا تھا مگر پلوامہ حملے کی آڑ لے کے ہندوستان نے پاکستان پہ بزدلانہ حملے کیے اور اُسے منہ کی کھانی پڑی حسن صدیقی اور نومان جیسے بہادر سپاہیوں نے دو فوجی جہاز مار گرائے ہندوستان نے جنبہ میں جو کاروائی کی وہاں کسی قسم کا مدرسہ نہیں تھا اور جھوٹ کی ہزمیت اٹھائ۔۔۔اپ جانتے ہیں اگر آج اپ اپنے دیس میں سکون کی نیند سوتے ہیں اور آزاد زندگی بسر کر رہے ہیں تو صرف پاک فوج کی وجہ سے ۔۔۔ہم پہ بھی یہ فرض عاید ہوتا ہے کہ اپنی پاک فوج کے خلاف کوئ بھی بات کو برداشت نہ کرتے ہوۓ اس کا ساتھ دیں ہر قسم کی سازش کا منہ توڑ جواب دیا جاۓ کچھ عالمی طاقتیں ہمیں کمزور کرنا چاہیتی ہیں جس کے لیے وہ ایسے گھناونے اقدام بھی کرتی ہیں جس سے عوام میں بے چینی پیدا ہو اور وہ آپس میں ہی اُلجھنے لگیں اگر آپ یہ خودکشی نہیں کرنا چاہتے تو فوج کو نشانہ کبھی بھی مت بنایئں اندرونی مسائل اور سازشیں بھی بہت نمایاں ہیں ملک کے ساتھ فوج کا بھی ساتھ دیں ۔۔۔یہ ہیں تو آپ سُکھی ہیں ۔۔۔۔۔۔!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com