نوجوان لکھاری

نوجوان لکھاری
تحریر: نوید اسلم ملک
زبان ایسے میٹھی جیسے شہد،ملن سارے ایسے کہ جب بھی ملاقات ہو تو مختصر سی گفتگو سے طبیعت کو تروتازہ کر دیں،سنیں توجہ سے،بولیں تو محبت جھلکے۔مہمان نواز ایسے کہ خود کھانا پیش کریں۔وہ عصرِ حاضر کے دانشور،ماہر تعلیم اور عظیم تربیت کار ہیں۔مزاج ہمیشہ سیکھنے اور سکھانے کا رہتا ہے۔چند دن قبل ان سے کچھ دوستوں کے ہمراہ ملاقات کا شرف حاصل ہوا۔ نوجوان لکھاریوں کا ایک وفد پاکستان چینجرز فورم کے تحت ان کے پاس حاضر ہوا۔
ان کا کہنا تھا کہ اچھا لکھنے کے لیے مطالعہ زیادہ سے زیادہ کریں۔ اپنے خطے کے مصنفین کو پڑھنے کے ساتھ ساتھ بین القوامی لکھاریوں کی تحریروں کو بھی مدنظر رکھیں۔ایسا لکھیں جو اس معاشرے میں آج کے لیے اہم ہونے کے ساتھ ساتھ مستقبل میں بھی راہنمائی کر سکے۔آپ دیکھ لیں کہ گذشتہ کتنی دہائیوں سے کوئی بڑا شاعر،ادیب و لکھاری پیدا نہیں ہو سکا کیونکہ ہم نے معیارات بدل دیے ہیں۔مثبت چیزیں تلاش کریں اور ان کو پروموٹ کریں۔ہمیشہ نیگییٹیوٹی نہ دیکھتے رہیں۔ داد دینے اور حوصلہ افزائی کا ماحول پیدا کریں۔محبت بانٹیں اور محبت لیں۔ہمیشہ استاد کی دل سے قدر کریں۔رول ماڈل،مرشد کا ہونا بہت ضروری ہے کیونکہ مرشدگمراہ نہیں ہونے دیتا، کوئی بھی ہوسکتا ہے ،ہر کام کا ایک مینٹور ہوتا ہے ۔لوگوں سے جب پوچھا جاتا ہے کہ بتاؤ تمہارا گرو کون ہے تو سوچ میں پڑ جاتے ہیں یا کسی مشہور شخصیت کا نام بتا دیتے ہیں۔جب کہ سیکھا تو کسی سے بھی جا سکتا ہے۔اپنی زندگی کے مقصد کو واضح کریں اور اس پر کام کریں۔ بعض لوگ ایک وقت پر تنقید جبکہ دوسرے وقت پر داد دے رہے ہوتے ہیں۔وہ اپنی رائے میں خود کلیئر نہیں ہوتے۔اس طرح ڈبل مائنڈڈ ہوکر،وہ کیسے دوسروں کی بہتر اصلاح کر سکتے ہیں اس لیے زیادہ اور مکمل سیکھیں تاکہ خود اعتمادی آ سکے۔ایک لکھاری کے لیے اپنی سوچ میں واضح ہونا بہت ضروری ہے۔آپ لوگ لکھنے کے پیشے سے منسلک ہیں۔قوم کا مستقبل آپ نوجوانوں نے ہی چلانا ہے۔اس لیے خود کو اس قابل بنائیں کہ آنے والے دن روشن ثابت ہوں, ایک لکھاری معاشرے میں تبدیلی کے لیے اہم کردار ہوتا ہے اس لیے تاریخی کتب اور ادب کا مطالعہ زیادہ سے زیادہ کریں۔اپنی ترجیحات پر توجہ دیں اور لوگوں کی تنقید کی پرواہ نہ کریں کیونکہ تنقید ہمیشہ متحرک لوگوں پر ہی ہوتی ہے۔نیت صاف اور خدا سے دعا کرتے رہیں۔محنت اور لگن سے کام کریں۔یہ جوابات انہوں نے شرکاء کے سوالات پر دئیے۔وہ علم کا سمندر،معروف معلم قاسم علی شاہ صاحب ہیں جنہوں نے مختصر وقت میں،سیکھنے والوں کو بہت کچھ دکھا دیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com