مولانا فضل الرحمٰن سے نمٹنے کیلئے حکومت نےحکمتِ عملی تیارکرلی

لاہور(ویب ڈیسک): وفاقی حکومت نے مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ سے نمٹنے کے لئے علما سے مدد لینے کا فیصلہ کرلیا، وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت علماء مشاورتی اجلاس ختم ہو گیا۔ عمران خان کا کہنا ہے امت مسلمہ میں اتحاد وقت کی اہم ضرورت ہے، علماء کرام اتحاد و یگانگت کے پیغام کو عام کریں۔
علما مشاورتی اجلاس وزیر اعظم آفس اسلام آباد میں ہوا، اجلاس کی صدارت عمران خان نے کی، اجلاس میں وزیر اعظم نے علما کرام کو سعودی عرب اور ایران کے درمیان مصالحتی کردار پر بریفنگ دی۔ وزیر اعظم نے علما کرام سے مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے میں بھی کردار ادا کرنے کی درخواست کی۔ وزیراعظم نے علما کرام کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ دینی مدارس کے حوالے سے انقلابی ریفارمز کی جا رہی ہیں، دینی مدارس کے طلباء کو حکومتی سرپرستی فراہم کریں گے۔ انہوں نے شرکا اجلاس سے سوال کیا کہ وہ کونسا مسلمان ہے جو ختم نبوت کا پہرے دار نہیں ؟۔ مشاورتی اجلاس میں شریک علامہ طاہر اشرفی نے میڈیا سے غیر رسمی بات کرتے ہوئے بتایا کہ وزیراعظم نے آزادی مارچ پر زیادہ بات نہیں کی، وزیراعظم نے آغاز میں ہی کہہ دیا تھا کہ یہ ملاقات مولانا کے آزادی مارچ سے متعلق نہیں، حکومتوں میں دھرنے اور احتجاج ہوتے رہتے ہیں، احتجاج معمول کی بات ہے، حکومت کو اس حوالے سے کوئی پریشانی نہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com