انتہائی مختصر لباس زیب تن کرنے پر صدف کنول کو تنقید کا سامنا

لاہور(ویب ڈیسک) فیشن پاکستان ویک 2019 جاری ہے جس میں مختلف ڈیزائنر اپنے لباس پیش کر رہے ہیں، فیشن ویک میں ماڈلز کے علاوہ پاکستانی فلم اور ڈرامہ انڈسٹری کے اداکار بھی شریک ہیں ۔ ریمپ پر ہر کوئی اپنے جلوے دکھا رہا ہے لیکن جو جلوہ ماڈل گرل صدف کنول نے دکھایا ہے اس پر پاکستانی آگ بگولہ ہوگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق : ماڈل گرل صدف کنول نے فیشن پاکستان ویک میں اطالوی ڈیزائنر سٹیلا جین کا لباس زیب تن کرکے ریمپ پر واک کی۔ یہ ایک انتہائی مختصر فراک تھا جس کے باعث صدف کنول کو یہ پہن کر واک کرنے پر تنقید کا سامنا ہے اور لوگ اس پر طرح طرح کے تبصرے کر رہے ہیں۔ انہوں نے اطالوی ڈیزائنر کے لباس کے ساتھ کیلاش روایت کے تحت اپنا ہیئر سٹائل بنوایا اور گالوں پر سرخ رنگ کے ٹیکے بھی لگائے ہوئے تھے۔

ثمین نامی ایک خاتون نے لکھا ’ بہنا ! اگر آپ نیچے ٹائٹس ہی پہن لیتیں تو آپ کا رشتہ ریجیکٹ نہیں ہوجانا تھا۔‘

ایک صارف نے اس فراک کو بدترین قرار دیا تھا ، تو ایک نے ڈیزائنرز پر انگلی اٹھادی۔ نشانامی نے صدف کنول سے سوال پوچھا کہ آپ نے یہ بھی کیوں پہنا ہے، کیا ضرورت تھی۔

صدف کنول کی ریمپ پر واک دیکھ کر بہت سے لوگ کمنٹس سیکشن میں 4 حرف بھیجتے نظر آئے۔

احمد خان نے صدف کنول پر انگلی اٹھادی اور کہا کہ اس کا دل کرے تو یہ بے لباس بھی آسکتی ہے۔

انسٹاگرام پر ایک صارف کو یہ مغالطہ ہوگیا کہ کہیں صدف کنول اپنی چھوٹی بیٹی کا فراک پہن کر آگئی ہے۔ واضح رہے کہ صدف کنول ابھی تک غیر شادی شدہ ہیں۔

سعدیہ محمود نے کہا کہ اس طرح کے لباس میں واک کروا کے ماڈلز کا مذاق اڑوانے کا وقت نہیں ہے، یہ ڈیزائنرز کیلئے سوچنے کا لمحہ ہے کہ وہ کس طرح کی ثقافت پرموٹ کر رہے ہیں۔ یار اس طرح کے فراک کون پہنتا ہے، یہ دیکھ کر سخت مایوسی ہوئی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com